26 دسمبر 2017

اوپیڈ زکے بحران کا مقابلہ کرنے میں رکن ریاستوں کی مدد کے لیے یواین اوڈی سی نے ایک کتاب کا اجراء کیا ہے

حال ہی میں ہم نے دنیا بھر میں اوپیڈز کے زیادہ استعمال سے ہونے والی اموات میں بہت زیادہ اضافہ دیکھا ہے۔ اس سے پہلے اس طرح کی اموات زیادہ تر مقامی سطح پر شمالی امریکہ میں ہوا کرتی تھیں، تاہم اب اس طرح کی ہلاکتیں یورپی ممالک میں بھی ہونے لگی ہیں۔ اس طرح کی اموات  کا ذمہ دار خفیہ طریقے سے بنائی جانے والی فینٹالن اور اس طرح کی دیگر چیزوں کی ہیروئن میں ملاوٹ کو سمجھا جاتا ہے۔

اس چیلنج کا مقابلہ کرنے میں رکن ریاستوں کی معاونت کے لیے یو این او ڈی سی کے لیبارٹری اینڈ فارینزک سروسز پروگرام نے حال ہی میں فارینزک لیبارٹریوں کے لیے ایک مینوئل شایع کیا ہے جس کا عنوان ہے ''حیاتیاتی نمونوں میں فینٹالن اور اس سے ملتی جلتی چیزوں کی نشاندہی اور تجزیے کے لیے مجوزہ طریقے''۔

اس کتاب کے بارے میں بات کرتے ہوئے یو این او ڈی سی کی رسرچ اینڈ ٹرینڈ اینالسز برانچ کی سربراہ اینجیلا می کا کہنا تھا کہ : ''اس طرح کے موادوں کی نشاندہی اور ان کے بارے میں مطلع کرنے سلسلے میں ایجنسیوں اور قومی لیبارٹریوں کے قانون کے نفاذ کی صلاحیت کو بڑھانا  اس وقت اوپیڈز کے بحران کی نوعیت اور  اس کے پھیلاؤ کو سمجھنے کے لیے بہت زیادہ اہمیت رکھتا ہے۔  موّثر بین الاقوامی ردِعمل کے سلسلے میں شواہد کی بنیاد پر معلومات کے حصول کے لیے اس قدم کی کلیدی اہمیت ہے۔''

۲۰۱۵ میں اوپیڈز کے زیادہ استعمال  سےامریکہ میں ۳۳۰۰۰ افراد ہلاک ہوگئےتھے ، یہ تعداد دیگر تمام طرح کی منشیات  یا پھر ٹریفک حادثات میں ہونے والی ہلاکتوں سے بھی بڑھی ہوئی تھیں۔ جنوری اور جون ۲۰۱۷ کے درمیان کینیڈا میں ہیروئن کے جتنے نمونوں کا جائز ہ لیا گیا ان میں سے ۶۵ فیصد میں فینٹالن یا اس سے ملتے جلتے موادوں کی ملاوٹ پائی گئی۔ اسی طرح یورپین مانٹرنگ سینٹر فار ڈرگز اینڈ ڈرگز ایڈکشن نے رپورٹ دی کہ یورپ میں کارفینٹانل (جانوروں کی ایک دوا جس میں مارفین سے بھی ۱۰۰۰۰ گنا زیادہ طاقت پائی جاتی )  کے استعمال سے ۶۰ افراد کی موت واقع ہوئی۔

فینٹالن ایک مُسکن نشہ آور ہے جس کو جراحت میں بے ہوش کرنے اور سرطان میں مبتلا مریضوں کے شدید درد کو کم کرنے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے اور اس کا شمار بھی عالمی ادارہ صحت کی ان ادویات کی فہرست میں ہوتا ہے جنہیں انتہائی ضروری قرار دیا گیا ہے۔ فینٹالن اس  سے ملتی جلتی چار ادویات کو دوا کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے اور ان میں سے مجموعی طور پر ۱۵ بین الاقوامی کنٹرول میں ہیں۔

ذہر خورانی اور ہلاکتوں کے  علاوہ زیادہ مقدار میں منشیات کے استعمال سے ہونے والی ہلاکتوں کے معاملات وغیرہ میں فینٹالن کی نشاندہی  آج بھی ایک بہت بڑا چیلنج بنا ہوا  ہے۔ ہوسکتاہے منشیات میں فینٹالن کی ملاوٹ بہت کم مقدار میں کی گئی ہو اور اس طرح اس کا پتہ لگانا اور اس کی نشاندہی کرنا بہت مشکل ہوسکتا ہے۔ اس طرح کے حالات میں عالمی سطح پر اس مسئلہ کے وسعت اور پھیلاؤ کے بارے میں درست ترین معلومات کا حصول ایک مسئلہ ہے۔

۲۰۱۲ سے یو این او ڈی سی کے نئے تحلیلِ نفسی موادوں کے بارے میں ابتدائی طور پر خبردار کرنے والے نظام کو غیر ضابطہ شدہ ۲۰ اقسام کی فینٹالن کے بارے میں معلومات وصول ہوئی۔ اگر  موازن کیا جائے تو اس طرح کی ملنے والے فینٹالن کی طاقت  مارفین کے مقابلے میں ۱۰ گنا سے لے کر کئی ہزار گنا زیادہ طاقتور ہوسکتی ہے۔

مزید نتائج لوڈ کررہا ہے۔